Report

گوادر; بلوچی زبان کے نامور شاعر استاد عبدالمجید گوادری کی تیسری برسی کے موقع پر تقریب کا انعقاد: عبدالحلیم

بلوچی زبان کے نامور قومی شاعر اور بلوچی ترانہ “ما چُکیں بلوچانی” کے خالق استاد عبدالمجید گوادری کی تیسری برسی کی مناسبت سے آر سی ڈی کونسل گوادر کے زیر اہتمام خصوصی تقریب کا انعقاد کیا گیا۔ استاد عبدالمجید گوادری 1937 کو گوادر میں پیدا ہوئے اور 23 فروری 2018 ان کی یوم وفات کا دن ہے۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے مرحوم شاعر کے ادبی خدمات کو زبردست خراج عقیدت پیش کی اور کہا کہ استاد عبدالمجید گوادری کا ادبی ورثہ غیر معمولی اسلوب کا حامل ہے جس میں قومی، شعوری اور فکری ہیداری سمیت صوفی ازم کا بھی امتزاج پایا جاتا ہے۔ مرحوم کی شاعری ہر دور کی ترجمانی کرتی ہے، مرحوم نے اپنی شاعری سے احساسات اور جذبات کو خوبصورتی سے تخلیق کیا ہے شاعری کا ایسا غیر معمولی اسلوب شاید ہی موجود ہو۔

مقررین کا کہنا تھا کہ مرحوم نے اپنی تخلیقات سے بلوچی زبان اور ادب کی بے لوث خدمت کی جس کو کسی بھی صورت فراموش نہیں کیا جا سکتا۔ استاد عبدالمجید گوادری جیسے شاعر صدیوں میں پیدا ہوتے ہیں، وقت کا تقاضا ہے کہ استاد شناسائی کے جذبہ کو پروان چڑھایا جائے، مرحوم کا ادبی ورثہ بلوچی زبان اور ادب کا خوبصورت اثاثہ ہے جس کو اپنانے کی ضرورت ہے اس کے تہیں بلوچی زبان اور ادب کے فروغ کو ممکن بنایا جاسکتا ہے۔

مقررین میں بلوچی زبان کے معروف ادیب پروفیسر اے آر داد اور چندن ساچ شامل تھے۔ تقریب میں بیرم بزنجو کا ریکارڈ شدہ مکالمہ ان کی اپنی زبانی سنایا گیا۔

تقریب کے نظامت کے فرائض آرسی سی ڈی کونسل گوادر کے خازن رحمت اللہ بلوچ نے اداکئے۔

Share